وقت ضائع کرنے کے طریقے

اگر آپ فارغ بیٹھے ہیں اور کچھ کرنا چاہتے ہیں مگر کرنے کو کچھ نہیں ہے تو یہ کام کی پوسٹ آپ کیلیے ہے۔ خالی دماغ شیطان کا گھر ہوتا ہے لہذٰا آپ مندرجہ ذیل طریقوں میں سے ایک طریقہ آزمائیں اور اپنا وقت ضائع کریں۔

1. کسی قریبی مارکیٹ میں چلے جائیں اور مختلف دکانوں میں داخل ہو کر ان تمام چیزوں کے بھاؤ معلوم کریں جو آپ کبھی مستقبل میں بھی خریدنا پسند نہیں کریں گے۔ اگر دکاندار زیادہ چرب زبان ہو تو اشیاء میں دو چار کیڑے نکالیں اور منہ بناتے ہوئے وہاں سے اگلی دکان کی طرف روانہ ہو جائیں۔

2. ٹیلی فون اٹھائیں اور کوئی نامعلوم نمبر ملا دیں۔ سلام دعا کرنے کے بعد بال بچوں کا حال پوچھیں ۔  ظاہر ہے کہ وہ آپ کا نام پوچھے گا مگر آپ اگلے بندے کو سسپنس میں رکھیں اور کہیں کہ میاں بوجھو تو جانیں۔ جب وہ زیادہ اصرار کرے تو گلے شکوے شروع کر دیں کہ تم تو مجھے بھول ہی گئے، اب پہچانتے ہی نہیں ہو! جب وہ تنگ آ جائے تو کہیں کہ تم فلاں ہی ہو نا؟ اور اس کے انکار پر سوری رانگ نمبر کہہ کر کال ختم کر دیں۔ تمام گفتگو دوستانہ انداز میں کریں تاکہ اگلا بندہ آپ کو کوئی دوست سمجھ کر بدتمیزی نہ کر سکے۔ آپ یہ عمل کئی بار دہرا سکتے ہیں۔ خواتین اس تجویز پر عمل کرنے کی فحش غلطی ہر گز نہ کریں۔

3. ایک پیچ کس لیں اور گھر میں موجود کوئی مشینری کھول دیں۔ اس کے تمام پرزے علیحدہ کر دیں اور اب اس کو دوبارہ جوڑنے کی کوشش کریں۔ مثال کے طور پر اپنے کمپیوٹر کا کی بورڈ کھولیں اوراس کے تمام بٹن نکال دیں۔ اب ان پر موجود گرد و غبار صاف کریں اور دوبارہ جوڑیں۔ اس عمل میں آپ کے کم از کم دو یا تین گھنٹے ضائع ہو جائیں گے۔ آپ اگر تمام بٹن صحیح جگہ پر واپس لگانے میں کامیاب ہو گئے تو آپ واقعی ذہین ہیں۔  اس تجویز پر عمل کرنے کی صورت میں آپ کے کسی مالی نقصان کا میں ہرگز ذمہ دار نہیں۔

4. ایک کاغذ اور پینسل لیں۔ اپنے پیدا ہونے سے لے کر نوکری شروع کرنے تک ان تمام اخراجات کو لکھیں جو آپ کے والدین نے آپ پر کیے۔ یہاں آپ اندازوں سے بھی کام چلا سکتے ہیں۔ وہ تمام چیزیں اور ان کی مالیت لکھیں جو آپ کو یاد ہیں اور جو یاد نہیں اندازے سے ان کی مالیت لکھیں۔ اس طرح ایک طویل لسٹ تیار ہو جائے گی اور آپ ماضی کا طویل سفر بھی طے کر لیں گے۔ آخر میں ٹوٹل کریں۔ ٹوٹل دیکھنے کے بعد حیران مت ہوں اور نہ ہی یہ سوچیں کہ اگر آپ پیدا نہ ہوتے تو آپ کے والدین کی کتنی بڑی بچت ہو سکتی تھی۔

5. اگر اوپر والی تجویز زیادہ مشکل محسوس ہوتی ہے تو پھر اپنے سالانہ اخراجات کا تخمینہ لگائیں۔

6. کچن میں چلے جائیں اور کچھ ایسی نئی چیز بنائیں جو آج سے پہلے نہ کسی نے بنائی ہو اور نہ ہی کسی نے کھائی ہو۔ تجربہ کامیاب ہو یا ناکام، گھر میں موجود دوسرے لوگوں کو تیار کردہ ڈش چکھا کر داد وصول کریں۔ ایمرجنسی کی صورت میں ڈاکٹر سے رجوع کریں۔

7. اپنے کمپیوٹر کی ہارڈ ڈسک کو ڈی فریگمنٹ کریں یا اپنے قیمتی ڈیٹا کو بیک اپ کریں۔ اس کام پر کئی گھنٹے صرف ہوں گے۔

8. اگر آپ خاتون ہیں تو اپنا میک اپ کریں۔

9. اگر آپ سائنس میں دلچسپی رکھتے ہیں تو آئن سٹائن یا کسی اور سائنسدان کی پیش کردہ تھیوری کو پڑھ کر سمجھنے کی کوشش کریں۔ اگر آپ کو سمجھ آ جائے تو کسی دوسرے فرد کو سمجھانے کی کوشش کریں۔

10. اگر آپ دفتر میں ہیں تو ایک کاغذ پر اپنے باس کا کارٹون بنائیں اور چغل خوروں اور باس کے علاوہ سب کو دکھائیں۔

11. پرانا اخبار لے لیں اور اس پر موجود لوگوں کی تصویروں پر مختلف اقسام کی عینکیں اور مونچھیں بنائیں۔

12. اگر آپ سست واقع ہوئے ہیں  اور ہلنے جلنے کے موڈ میں نہیں تو پھر سو جائیں۔

ان باتوں کے علاوہ کوئی تجویز آپ کے ذہن میں بھی ہے تو تبصرہ میں  ضرور لکھیں تاکہ زیادہ سے زیادہ لوگوں کا بھلا ہو سکے۔

Advertisements

Posted on جون 28, 2010, in طنز و مزاح and tagged . Bookmark the permalink. 51 تبصرے.

  1. بھئی واہ۔۔۔ سارے طریقے ہی زبر دست ہیں۔۔۔ اور کئی تو میں اکثر استعمال کرتا رہتا ہوں۔۔۔۔

  2. پا جی! فیس بک کتھے مر گئی اے؟
    ویسے طریقے تو بہت شاندار بیان کیے ہیں آپ نے 🙂

    • فیس بک تے اپنی جگہ قائم اے۔ کیوں کی ہویا؟
      ویسے اس تجویز سے بعض مسلمانوں کے جذبات بھڑک سکتے تھے اس لیے ذکر ہی نہیں کیا

  3. میل باکس میں پڑی ہزاروں ان پڑھی میلز کو ایک ایک کر کے پڑھیں۔

  4. جو ای میل اکائونٹ کبھی نہیں کھولا اسکا جنک میل کھولیں اور پڑھیں۔۔۔

  5. یار ونڈر فل ٹاپک چوزا ہے لکھنے کے لیے
    اور پوسٹ بھی بڑی اعلٰی ہے
    میرے پاس جب کچھ کرنے کو نہ ہو تو ایک ہی کام کرتا ہوں
    صرف بور ہوتا ہوں
    😀

  6. لوگو میں لٹ گیا اوئے۔دھائی ھے دھائی ھے۔تجویز نمبر چار کے مطابق حساب کتاب کیا تو ابا معصوم کی طرف کو ئی بیس کروڑ نکلتے ہیں۔اب کیا کروں؟واپسی کیلئے آزاد عدلیہ کی طرف جاوں؟

  7. ہاہاہاہا
    بہت عمدہ ہے یار۔۔۔
    مزا آیا۔۔۔
    میری تجویز ہیے کہ ان لڑکیوں کے بارے میں سوچیں جنہوں نے آج تک آپ کوکسی بھی قسم کی لفٹ نہیں کرائی
    بلکہ اپنے بھائیوں سے آپ کو لفٹ کرادیا،
    پھر اس کے بعد جو پھینٹیاں لگیں
    وہ بھی سوچ سکتے ہیں
    لیکن یہ سوچنے میں جو دماغی نقصان پہنچے گا
    مصنف ہرگز اس کا ذمہ دار نہ ہوگا۔۔۔

  8. ميں نے يہ سب کچھ پڑھ ليا اور 3 منٹ ضائع ہو گئے ہيں ۔ اب ميں يہ نقصان کيسے پورا کروں ؟ کيونکہ ميرے پاس کبھی فالتو وقت نہيں ہوا بلکہ ہميشہ ہی وقت کی کمی رہی ۔ جوانی ميں کئی بار سوچا کہ کاش ايک دن ميں کام کرنے کيلئے 24 اور آرام کرنے کيلئے 8 گھنٹے ہوتے مگر نہ کام کو 24 ملے نہ آرام کو 8

  9. بلاگ پڑھیں اور جس بلاگ پر بھی کوئی اچھی اور اصلاحی بات دیکھیں، اس پر اعتراض کر دیں پھر جب تک آپ فارغ ہیں۔۔۔۔۔۔ تبصرے کرتے رہیں اور آگ بجھاتے رہیں۔۔۔۔

  10. سعد آپ کی پوسٹ پڑھنے کے بعد پورا یقین ہوگیا ۔ کہ واقعی آپ کے پاس کرنے کو کچھ نا تھا ۔ اب یہ ظالم وقت بھی تو گزارنہ تھا۔ تو کیوں نا مفت مشورے دے کر اپنا وقت پورا کیا جائے،،،،،، مان گے اپ کافی حد تک ذہین ہو

  11. یار کچھ طریقے میرے پاس ہیں تو صحیح لیکن بتا نہیں سکتا کہ فساد بوجہ فحاشی کا اندیشہ ہے۔

  12. اردو بلاگرز کی پرانی تحریریں پڑھیں اور جاننے کی کوشش کریں کہ وہ کون کون سی باتیں باقی بچی ہیں جن پر ان کے لڑنے کا چانس اب بھی ہیں!!!
    ایک تجویز 🙂

  13. ہا ہا ہا۔ زبردست سعد صاحب۔
    لگتا ہے آپ اس قسم کے کاموں میں بڑے مشتاق ہیں۔
    تبھی ایک سے ایک ترکیب آپ کے پاس موجود ہے۔

  14. تجویز نمبر آٹھ کچھ زیادہ مشکل نہیں ہے؟

  15. دادی اماں کے پاس جا کر ،اماں کی وہ باتیں بتائیں جو کہ وہ دادی کی غیر موجودگی میں کرتی ہیں ،اور پھر مزے سے پانی پت کی لڑائی دیکھیں۔

  16. آپ کی ساری تجاویز وقت ضائع کرنے والی نہیں ہیں بلکہ کچھ سیکھنے کیلیے بھی ہیں اور جب آپ کچھ سیکھتے ہیں تو وقت ضائع نہیں ہوتا۔
    وقت ضائع کرنے کا سب سے آسان طریقہ شیخ چلی کی طرح چند دن سوچنا شروع کر دیں اور عملی طور پر کچھ نہ کریں۔ چند دنوں میں آپ کے پاس وقت ہی وقت ہو گا اور کرنے کو کچھ نہیں۔

  17. ہا ہا ہا ہا
    کیا طریقے ہیں جناب اور کی بورڈ والا بیسٹ ہے۔

  18. میں وقت ضائع کرنے دفتر چلا جاتا ہوں

  19. السلام علیکم ورحمۃوبرکاتہ،
    بچپن کےدوستوں کویادکریں اوران کےمتعلق سوچیں کہ انہوں نےاتنی ترقی کی ہےاورآپ ابھی بھی وہی پرہیں۔

    والسلام
    جاویداقبال

  20. کیا بات ہے جی تجاویز تو ساری اچھی ہیں پر جب کبھی دفتر میں باس کی جھڑکیاں کھاتا ہوں تو پھر تجویز نمبر 10 پر عمل کرتا ہوں، اکثر و بیشتر۔۔۔۔۔ 😦

  21. شادی شدہ لوگ وقت سسرال میں بھی ضائع کر سکتے ھیں۔

  22. چا چا جی اس عمر میں آپ انڑ نیٹ پے 24 میں سے کتنا ٹائم گزارتے ھیں،،،؟

  1. پنگ بیک: Tweets that mention وقت ضائع کرنے کے طریقے « سعد کا بلاگ -- Topsy.com

تبصرہ کیجیے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: